این اے 75;مسلم لیگ ن حلقے میں دوبارہ انتخاب کروانے کا مطالبہ 339

این اے 75;مسلم لیگ ن حلقے میں دوبارہ انتخاب کروانے کا مطالبہ


http://daviddmorse.com/christ/5-turn-offs-to-church-planting-in-new-england/  این اے 75 ڈسکہ کا انتخاب متنازعہ ہونے پر مسلم لیگ ن نے حلقے میں دوبارہ الیکشن کروانے کا مطالبہ کر دیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق چیف الیکشن کمیشنر سکندر سلطان راجہ کی سربراہی میں 5 رکنی بنچ نے این اے 75 کے ضمنی انتخابات کے نتائج کے حوالے سے مسلم لیگ ن کی امیدوار نوشین افتخار کی درخواست پر سماعت کی۔این اے 75 کے ریٹرننگ افسر نے الیکشن کمیشن کے سامنے پیش ہوکر اپنی رپورٹ پیش کردی، ریٹرننگ افسر نے الیکشن کمیشن کے روبرو اپنے بیان میں کہا کہ این اے 75 میں کوئی نتیجہ تبدیل نہیں ہوا، جو نتائج بعد میں ملے وہ وہی تھے جو واٹس ایپ پر آ چکے تھے، بعض پریزائیڈنگ افسران کے نتائج وٹس ایپ پر بروقت آ گئے تھے، کچھ کا رزلٹ صبح 6 جب کہ کچھ کا 7 بجے ملا،رات کو ساڑھے تین بجے لیگی امیدوار نے شکایت کی، جس پر ڈی ایس پی ڈسکہ کو پریزائیڈنگ افسران کے ساتھ تعینات پولیس سے رابطے کا کہا گیا، پولیس افسران کا بھی تعینات عملے کے ساتھ رابطہ نہیں ہوسکا۔ممبر پنجاب الطاف قریشی نے استفسار کیا کہ کیا موبائل کمپنیوں سے پریزائیڈنگ افسران لوکیشن معلوم کروائی؟ جس پر ریٹرننگ افسر نے کہا کہ ڈی پی او کا نمبر بند تھا ان سے رابطہ نہیں ہوسکا۔ چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ آپ کے ساتھ اس وقت کیا ہوا تھا آپ فون پر گھبرائے ہوئے تھے ؟ ریٹرننگ افسر نے جواب دیا کہ ریٹرننگ آفس کے باہر ہجوم بہت تھا۔ لوگوں کے رش کی وجہ سے تصادم کا خدشہ تھا۔الیکشن کمیشن نے سوال کیا کہ کیا انتظامیہ آپ سے تعاون کر رہی تھی ؟ جس پر ریٹرننگ افسر نے جواب دیا کہ انتظامیہ نے ہم سے تعاون کیا تھا۔ ہجوم بہت زیادہ تھا ۔ سلمان اکرم راجہ نے اعتراض اُٹھایا کہ ریٹرننگ افسر اب اپنے مؤقف سے ہٹ رہے ہیں۔ الیکشن کمیشن نے آر او سے سوال کیا کہ کیا آپ پہلی مرتبہ آر او بنے ہیں؟ جس پر ریٹرننگ افسر نے جواب میں کہا کہ نہیں میں تیسری مرتبہ آر او بنا ہوں۔دوران سماعت این اے 75 ڈسکہ میں ضمنی انتخاب کے لیے پولنگ کے دوران ہونے والی فائرنگ کی ویڈیوز بھی عدالت کے سامنے پیش کر دی گئیں۔ فائرنگ کی ویڈیوز مسلم لیگ ن کی جانب سے کورٹ میں پیش کی گئیں۔ مسلم لیگ ن کے وکیل نے کہا کہ فائرنگ کے بعد ووٹرز ووٹ ڈالنے نہیں آئے، فائرنگ کر کے حلقے میں پولنگ رُکوائی گئی۔ انہوں نے کہا کہ جان بوجھ کر پولنگ رُکوائی گئی۔دوران سماعت حلقہ میں ہونے والے ناخوشگوار واقعات اور فائرنگ کی ویڈیوز بھی چلائی گئیں۔ مسلم لیگ ن کے وکیل سلمان اکرم راجہ نے کہا کہ کوف و ہراس پھیلا کر ووٹرز کو روکا گیا۔ دوران سماعت مسلم لیگ ن کے وکیل نے این اے 75 ڈسکہ میں دوبارہ انتخاب کروانے کا مطالبہ کر دیا۔ پی ٹی آئی اُمیدوار کے وکیل علی بخاری نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ انساف ہوتا ہوا نظر آنا چاہئیے۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

successively

http://advanceddentalmn.com/cosmetic-dentistry/dental-bonding